انسانی فطرت، انصاف بہ مقابل طاقت
ترجمے زبان و ادبِ دیگراں

انسانی فطرت، انصاف بہ مقابل طاقت (قسط چہارم)

اگر کوئی علم کی تاریخ مطالَعَہ کرتا ہے تو وہ دیکھ لیتا ہے کہ یہاں تجزیے کی دو کھلی ڈلی سَمتیں ہیں۔ ایک کے مطابق کسی کو دکھانا پڑتا ہےکہ کیسے اور کن حالات کے تحت اور کن وجوہات کی بناء پر تفہیم اپنے تشکیلی قواعد میں اپنے سنوارتی ہے، سچ کو دریافت کرتے […]

انسانی فطرت، انصاف بہ مقابل طاقت
ترجمے زبان و ادبِ دیگراں

انسانی فطرت، انصاف بہ مقابل طاقت (قسط سوم)

فریم ورک اور مختلف تفہیم کے ساتھ ایک مختلف زمانے میں ایک شان دار اور خلاق طریقے سے دُروں ساز شکل کے تصور کو ترقی دی جو کہ قاعدے کے نظام کے اندر رہتے ہوئے بنیادی طور […]

انسانی فطرت، انصاف بہ مقابل طاقت
ترجمے زبان و ادبِ دیگراں

انسانی فطرت، انصاف بہ مقابل طاقت (قسط دوم)

ستریویں اور اٹھارہویں صدیوں میں فطرت کے مطالعے میں زندگی کا عقیدہ بہت ہی کم استعمال کیا گیا ہے۔ اس زمانے میں معدنیات اور انسان سمیت فطرت کا کوئی بھی مطالَعہ کرنے والا فطرت کی درجہ بندی ایک وسیع وضاحت […]

انسانی فطرت، انصاف بہ مقابل طاقت
مطالعۂ خاص و فکر افروز

انسانی فطرت، انصاف بہ مقابل طاقت (قسط اوّل)

اس نظامِ علم کے اجزاء، جس علم کو میں ان سیکھا یا جبلّی علم کہتا ہوں جو یہ بچہ زبان سیکھنے کے لیے کام میں لاتا ہے، بیان کرنے کے لیے ہمیں یقین کی کئی منزلیں طے کرنے پڑیں گی۔ اور ہمیں اس نظام کی وضاحت کے لیے کافی محنت کرنی پڑے گی جو کہ بچے  کے ذہن میں علم کے حصول کے دوران موجود ہوتا ہے۔ […]

ںسترن احسن فتیحی
خبر و تبصرہ: لب آزاد ہیں تیرے

انسانی المیوں پر رسمی اظہارے

انسانی المیوں پر رسمی اظہاریے از، نسترن احسن فتیحی قانون، انصاف، اصول، انسانیت اور امن یہ سارے الفاظ ملکی اور عالمی سطح پر آج کل جتنے برتے جا رہے ہیں، شاید ہی کبھی پہلے اس […]

Yasser Chattha
مطالعۂ خاص و فکر افروز

انسان سے انسان تر بننے کی مختاری

انسان سے انسان تر بننے کی مختاری از، یاسر چٹھہ میں نے جتنے لوگوں سے بات کہ سید کاشف رضا کا ناول اسلوبی اور تفہیمی لحاظ سے اس لیے بھی بہت اہم ہے کہ اس […]

انسان ہونے کی خبر
خبر و تبصرہ: لب آزاد ہیں تیرے

اپنے انسان ہونے کی خبر لیجیے

اپنے انسان ہونے کی خبر لیجیے از، فرحت اللہ فیس بک گروپ ”سائنس کی دُنیا“ پر محترم وہارا امباکر کا ایک مضمون بَہ عنوان ”دوسرے لوگ“ دو بارہ پڑھنے کو مِلا۔ یہ مضمون اگر چہ […]

علی ارقم
خبر و تبصرہ: لب آزاد ہیں تیرے

صاحبہ ہونے میں بھی کیا بُرا ہے

‎صاحبہ ہونے میں بھی کیا بُرا ہے از، علی ارقم ہم نے اپنے والد صاحب (شالدا) کو ہمیشہ سے روایتی سخت گیر باپ کے تصور سے مختلف پایا ہے؛ نہ مزاج میں دُرشتی، نہ ہاتھ […]

لکھاری کی تصویر
ماحولیات، پائیدار مستقبل اور تعلیم و ترقیات

سکول آتے روتے بچے اور داخلہ امتحان کی لغویات

سکول آتے روتے بچے اور داخلہ امتحان کی لغویات از، یاسر چٹھہ جہل کو علم و فہم کیسے کہوں؟ اگر بچے انسانی وجود، فطرت اور حقیقت کا مہین سا کُل ہوتے ہیں تو یہ سکول […]