cinema and muslim countries مسلمان اور سینما
جمالِ ادب و شہرِ فنون

مسلمان اور سینما 

ایران کی پہلوی انتظامیہ نے ایک مخصوص سیاسی و ثقافتی پالیسی کے تحت برہنگی، شراب نوشی اور سیکس کو نمایاں رکھنے والی فلموں کی حوصلہ افزائی کی تھی جو ایرانی سماج […]

فلموں کے سیمیاتی تجزیے
جمالِ ادب و شہرِ فنون

فلموں کے سیمیاتی تجزیے (semiotic analysis) کے بارے میں

فلم رام تیری گنگا میلی (1985) اور پردیس (1997) کی ہیروئنز علامتی طور پر ہندوستان کی علامت ہیں۔ 1985 کی فلم نیو لبرل پالیسی سے پہلے کی ہے جس میں راج کپور نے گنگا […]

Junaid Jazib
جمالِ ادب و شہرِ فنون

ملاقات

دو گھنٹے کی بحث و تمحیص اور سنجیدہ غور و فکر کے بعد بھی بہت سی باتوں پر اتفاقِ رائے نہ ہو سکا اور اپنی شادی ختم کرنے کے لیے وہ کسی حتمی ایگری مَنٹ پر نہ پہنچ […]

Naseer Ahmed
جمالِ ادب و شہرِ فنون

جوش صاحب سے ذرا مسخری کر کے دکھاؤ؟

تب جوش صاحب کے چچا نے ساتویں چچی جان کی جان بخشی۔ لیکن فوراً ہی انھیں تین طلاقیں دے کر مائیکے رخصت کر دیا کہ جا اب مائیکے آفتاب سے اٹکھیلیاں کرتی رہ اور دیکھتی […]

حسین جاوید افروز
جمالِ ادب و شہرِ فنون

کبھی پی ٹی وی بھی انقلابی تھا

زرد دوپہر اور تپش لاہور اور کراچی کی سیاست کے معروض میں ہمارے سیاسی نظام کے کھوکھلے پن اور نظریاتی کنگالی کو مہارت سے اجاگر کرنے میں خاصے کام یاب رہے ہیں۔ بدحال […]

Yasser Chattha
جمالِ ادب و شہرِ فنون

کرونا جب جاتا ہے تو 

ان کے دو چار قدم کیسے ہمارے چہروں پر مسکراہٹ کے کھیت کھلیان اُگا دیتے تھے؟ ایسے منظر کو کوئی بھی ماں دیکھتی ہے تو تو دردِ زِہ کو فراموش کرنے والے گیت ابھرنے سے […]

Yasser Chattha
جمالِ ادب و شہرِ فنون

ارے اے ٹی ایم تیری تیرا دماغ، تیری بد تہذیبی

اے ٹی ایم مشین کی یہی آواز، اُس وقت بھی آتی تھی جب دادی کے چرخا کاتنے کے وقت پاس بیٹھتا تھا۔ (دادی کے لفظ کو جُوں ہی دادی لکھا ہے تو یاد میں کسی طور پر وقت اتنی […]

Naseer Ahmed
جمالِ ادب و شہرِ فنون

رانجھے کا جوگ بیراگ اور شہری اخلاقیات قسطِ دوم

سہتی کی یہ مدافعت نا تواں سی ہی رہتی ہے اور منصوبہ تیار ہو جاتا ہے۔ ہیر کھیت میں سانپ کے ڈسنے کا ناٹک کرتی ہے۔ جوگی جی سانپ کے زہر کے تِریاق کے بہانے کھیڑوں کے […]

Zaigham Raza
جمالِ ادب و شہرِ فنون

خواب نامہ۴

بس اتنا یاد ہے کہ ہم اس کے گھر میں داخل ہونے کے لیے سیڑھیاں چڑھ رہے تھے۔ تنگ سیڑھیوں پہ چڑھتے چڑھتے ہماری سانس پھول گئی، مگر زینے تھے کہ ختم ہونے میں ہی نہ آ ر […]

Maen Tamsal hoon Arifa Shahzad novel novel
جمالِ ادب و شہرِ فنون

عارفہ شہزاد کا ناول ’’میں تمثال ہوں‘‘ ایک بے ترتیب قاری کی نظر میں 

ناول عورت کے عشق، جذباتی و نفسیاتی کش مش، جنسی نا آسودگی کو موضوع بناتا ہے۔ سماجی و مذہبی جکڑ بندیاں جتنی بھی سخت ہوں، جنسی جذبات پر کوئی زور نہیں، یہ بتاتا ہے […]